اولین پاکستان فٹبال سمٹ کا لاہور کے مقامی ہوٹل میں انعقاد کیا گیا

لاہور: فیفا کے ہیڈ آف ایم اے گورننس رولف ٹینر، اور ہیڈ آف ساﺅتھ ایشیا ایونٹ پرشوتم کیٹل،فیفا کی نامزد نارملائزیشن کمیٹی کے چیئرمین ہارون ملک، رکن شاہد نیاز کھوکھر نے پاکستان میں فٹبال معاملات پر گفتگو کی، تقریب میں فیفا ریجنل ڈیویلپمنٹ آفس کے کوارڈینیٹر آندرے ویشکووچ ، این سی ارکان سعود ہاشمی، حارث عظمت، فٹبال کے اسٹیک ہولڈرز بھی شریک ہوئے۔
فیفا اور اے ایف سی وفد نے پاکستان میں فٹبال معاملات پر اظہار اطمینان کیا،پی ایف ایف نارملائزیشن کمیٹی کو ہر ممکن معاونت کی یقین دہانی بھی کرائی۔ہارون ملک نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ کے 74 برس میں وہ کام نہیں ہوئے جو ہم کر رہے ہیں، فٹبال فیڈریشن میں کلبز کوئی ریکارڈ ہی موجود نہیں، پاکستان فٹبال کا ڈیٹا بیس مکمل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں،پی ایف ایف آئین کے مطابق سکروٹنی کے بعد 165 دن میں انتخابات ہوں گے، نارملائزیشن کمیٹی کا مینڈیٹ بڑھانے کا اختیار صرف فیفا کونسل کے پاس ہے، فیفا اور اے ایف سی وفد کی رپورٹ پر فیفا کونسل کمیٹی کے مینڈیٹ کا فیصلہ کرے گی، یقین ہے کہ فیفا کونسل کا ہر فیصلہ پاکستان فٹبال کے مفاد میں ہوگا۔
شاہد نیاز کھوکھر نے کہا کہ پہلی بار پاکستان میں فیفا کنیکٹ پروگرام شروع کیا گیا،پی ایف ایف کے صاف شفاف انتخابات کی جانب یہ پہلا قدم ہے،کلبز کا صرف کاغذی وجود نہیں ہوگا بلکہ فٹبال کا ڈھانچہ مضبوط بنیادوں پر استوار ہوگا،صاف شفاف انتخابات سے پاکستان ایک طویل عرصہ سے نظر آنے والے مسائل کے گڑھے سے نکل آئے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں