دہلی بلز ، فیوچر میٹریس نے عجمان ٹی 20کپ کے پہلے چیمپئن کا اعزاز حاصل کر لیا

عجمان (سپورٹس لیکس) دہلی بلز – فیوچر میٹریس ملک اسٹیڈیم میں منعقدہ اے وی آر پے نیوز عجمان ٹی ٹونٹی کپ کے پہلے چیمپئنبن گئے ۔ اے وی آر پے نیوز عجمان ٹی ٹونٹی کپ کے پیش کردہ SKYEXCHANGE.NET تھے.
مراٹھا عربینز کے تعاقب میں 8 وکٹوں پر 142 رنز بنائے، زوار فرید نے 63 گیندوں پر سات چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے اپنی ٹیم کا نصف سکور کیا۔ انہیں سید حیدر کا بروقت تعاون ملا، جنہوں نے 20 گیندوں پر 32 رنز بنائے اور دونوں نے مل کر پانچویں وکٹ کے لیے 65 رنز کی اہم شراکت کی۔ فرید نے مراٹھا عربینز – برادرز گیس کے ٹوٹل کو محدود کرنے کے لیے تین وکٹیں لے اپنی ٹیم کی جیت کو یقینی بنایا۔
فائنل میچ میں دہلی بلز – فیوچر میٹریس نے ٹاس جیت کر بولنگ کا انتخاب کیا۔ مراٹھا عربینز – برادرز گیس کے اوپنر اور کپتان جیجو جناردھن اپنے انڈر 19 کھلاڑی حمدان طاہر کے ساتھ میدان میں آئے۔ دہلی بلز – فیوچر میٹریس نے اپنے انڈر 19 کھلاڑی اور بائیں ہاتھ کے اسپنر نیلانش کیشوانی کے ساتھ بائولنگ اٹیک کا آغاز کیا۔ حمدان طاہر نے پہلے اوور کی چوتھی گیند پر اوور مڈ آف کر کے فائنل کی پہلی بائونڈری اسکور کی۔
زاہد علی نے صرف تین رنز دے کر دوسرا اوور پھینکا۔ کپتان عمیر علی نے تیسرے اوور میں صرف چھ رنز دیے۔ اس کے بعد زاہد علی نے چوتھے اوور کی دوسری گیند پر 7 کے سکور پر جیجو جناردھنن کی وکٹ لے کر مڈ آن پر کیچ لیا۔ مراٹھا عربینز – برادرز گیس 4.3 اوورز میں 3 وکٹوں پر 22 رنز بنائے۔
تنویر جنید اور محمد افضل اسکور کو 44 تک لے گئے جب بائیں ہاتھ کے اسپنر سلطان احمد نے جنید کو 16 رنز پر کیچ اینڈ بولڈ کیا۔مراٹھا عربینز – برادر گیس نے 4 وکٹوں پر 79 رنز بنائے۔ زوار فرید نے 16 ویں اوور میں صرف سات رنز دیے۔ شاہنواز خان نے 17ویں اوور کی دوسری اور تیسری گیند پر عمیر علی کو چوکا اور ایک چھکا لگایا لیکن وہ اس اوور کی آخری گیند پر 33 رنز بنا کر لانگ آف پر زاہد علی کے ہاتھوں کیچ ہو گئے۔
افضل 34 گیندوں پر تین چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 35 رنز بنا کر آئوٹ ہوئے ۔عمر فاروق نے فرید کی گیند پر چھکا لگانے کی پہلی گیند پر اپنے ارادے کا اعلان کیا۔ اگلے اوور میں ذیشان عابد نے زاہد علی کی پہلی دو گیندوں پر لگاتار دو چوکے لگائے اور پھر چوتھی گیند پر چھکا لگایا۔ عمر فاروق نے بھی آخری گیند پر چھکا لگا کر اس اوور میں 23 رنز بنائے۔
آخری اوور میں زوار فرید نے ذیشان عابد کو 18 رنز پر ڈیپ پوائنٹ پر نیلانش کیشوانی کے ہاتھوں کیچ کرا دیا۔ عمر فاروق نے چوتھی گیند پر زوار فرید کو بائونڈری لگائی لیکن اگلی ہی گیند پر وہ 16 کے سکور پر بولڈ ہو گئے۔ آخر میں مراٹھا عربینز – برادر گیس نے 8.4 اوورز میں 4 وکٹوں کے نقصان پر 142 رنز بنائے ۔’
دہلی بلز – فیوچر میٹریس کے اوپنر عبدالشکور کو پہلے اوور کی دوسری گیند پر ثاقب منشاد کی گیند پر وکٹ کیپر حمدان طاہر کے ہاتھوں صفر پر کیچ آئوٹ ہوئے۔ عادل مرزا کو 11 رنز پر مڈ آن پر عثمان خان کے ہاتھوں کیچ کرایا۔

بائیں ہاتھ سے کھیلنے والے محمد عثمان نے 3.1 اوور میں 2 کے نقصان پر 15 کے سکور پر آئوٹ ہوئے۔ثاقب منشاد نے شاندار پانچواں اوور پھینکا اور صرف ایک رن دیا۔ محمد عثمان روانی سے اسٹروک کرنے لگے۔ ساتویں اوور میں جیجو جناردھن نے صرف چار رنز دیے۔ زوار فرید نے آٹھویں اوور کے مڈ آن میں جیجو کو باو¿نڈری لگا کر اسکور کو 50 تک پہنچایا۔ ثاقب منشاد، ڈیپ اسکوائر لیگ سے بھاگتے ہوئے، کیچ لیا.
آخری دس اوورز میں 88 رنز کی ضرورت کے ساتھ محمد اظہا نے زوار فرید کا ساتھ دیا۔ محمد اظہر نے 12ویں اوورکی دوسری گیند پر چھکا لگایا لیکن اگلی ہی گیند پر 7 کے سکور پرآوٹ ہو گئے۔۔ کپتان جیجو جناردھن نے اپنے بائولنگ اسٹائل سے 13ویں اوور پر عمر فاروق کو صرف چھ رنز دیے۔ جیجو نے 14ویں اوور میں دس رنز دیے۔ آخری چھ اوورز میں 51 رنز درکار تھے، زوار فرید نے 50 گیندوں میں اپنی نصف سنچری مکمل کی۔

مختصر اسکور:

دہلی بلز – فیوچر میٹریس bt مراٹھا عربینز – برادرز گیس 4 وکٹس۔
مراٹھا عربینز – برادرز گیس 20 اوورز میں 8 وکٹوں پر 142 (محمد افضل 35، شاہنواز خان 33، زاہد علی 33 پر 2، عمیر علی خان نے 34 رنز پر 2، زوار فرید نے 25 رنز پر 3)

دہلی بلز – فیوچر میٹریس 143 اوورز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر
(زوار فرید 72، سید حیدر 32، ہیری بھروال نے 25 رنز دے کر 2، عمر فاروق 29 رنز دے کر 3)
مین آف دی فائنل: زوار فرید
بہترین بلے باز: ساگر کلیان (بنگلہ ٹائیگرز- کاروان)
بہترین بولر: محمد اظہر (دہلی بلز – فیوچر میٹریس)
سب سے زیادہ چھکے: محمد افضل (دہلی بلز – فیوچر میٹریس)
ٹورنامنٹ کا بہترین کھلاڑی: جیجو جناردھن (مراٹھا عربینز – برادرز گیس)

اپنا تبصرہ بھیجیں