پولیو کے خاتمے کیلئے پاک آسٹریلیا ٹیسٹ میچ کےدوران آگاہی مہم

لاہور(سپورٹس رپورٹر) پولیو کے خاتمے کے لیے پاکستان کرکٹ بورڈ نے قذافی اسٹیڈیم لاہور میں ہونے والے ٹیسٹ میچ کے دوران آگاہی مہم چلائی ۔ پاکستان پولیو پروگرام اور پی سی بی کے مابین شراکت داری کے تحت پولیو سے آگاہی کے لئے مختلف سرگرمیوں کا انعقاد کیا گیا جس میں کھلاڑیوں نے پولیو کے بارے میں پیغامات اور پولیو ورکرز کو خراج تحسین پیش کیا جبکہ اسٹیڈیم میں ٹیسٹ میچ دیکھنے کے لئے پولیو ورکرز کو مفت ٹکٹس دیئے گئے۔

پاک آسٹریلیا ٹیسٹ میچ کے ذریعے لاکھوں کی تعداد میں لوگوں کو پولیو ویکسین کے بارے میں معلومات کا موقع فراہم ہوا۔
اس موقع پر کوآرڈینیٹر قومی ایمرجنسی آپریشنز سنٹر ڈاکٹر شہزاد بیگ نے کہا کہ ’’کرکٹرز بحیثیت قومی ہیرو بچوں اور نوجوانوں کے لیے رول ماڈل ہیں‘‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ ’’مجھے اس بات پر فخر ہے کہ پولیو کے خاتمے کی قومی مہم میں پاکستان کرکٹ بورڈ نے بھرپور کردار ادا کیا اور امید ہے کہ ان کے پیغامات ایسے علاقوں میں پہنچے یا سنے جائیں گے جہاں ہمیں سخت حالات کا سامنا ہے۔

مجھے اس بات پر یقین ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے ساتھ مل کر ہم ویکسینیشن کی اہمیت کو والدین کے لیے مزید اجاگر کریں گے تاکہ مستقبل میں کوئی بھی بچہ پولیو سے معذور نہ ہو کیونکہ یہ ایک بیماری ہے جس پر ویکسین کے ذریعے قابو پایا جاسکتا ہے‘‘۔

اس موقع پر پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین رمیز راجہ نے کرکٹ بورڈ کی جانب سے مکمل تعاون کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ ’’پاکستان کرکٹ بورڈ ملک سے پولیو کے مکمل خاتمے کے لیے پُرعزم ہے‘‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ ’’مشترکہ کوششوں سے ہم پولیو کا مکمل خاتمہ اور ویکسین کی افادیت میں اضافہ کرسکتے ہیں۔ اپنے بچوں اور معاشرے کو پولیو وائرس سے محفوظ بنانا ہم سب کی اجتماعی ذمہ داری ہے‘‘۔

پاکستان نے موجودہ وقت میں پولیو کے خاتمے میں ایک تاریخی کامیابی حاصل کی ہے جس کے نتیجے میں گزشتہ 14 ماہ سے کوئی بھی کیس رپورٹ نہیں ہوا۔ اگرچہ ملک کے بعض حصوں میں وائرس پایا جاتا ہے جو پاکستان بھر کے لیے مسلسل خطرےکی گھنٹی ہے۔
پاکستان اور افغانستان دنیا کے دو ایسے ممالک ہیں جہاں پر اب بھی پولیو وائرس موجود ہے۔ کوئی بھی ایسا بچہ جو پولیو ویکسین سے محروم رہے وہ باقی تمام بچوں کے لئے خطرہ ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں